Saturday, 14 May 2016

کراچی میں پنجابی ' سندھی ' پٹھان اتحاد بہت ضروری ھے۔

کراچی کی 75٪ آبادی اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر نہیں ھے کیونکہ کراچی میں 15٪ پنجابی ' 15٪ پٹھان ' 10٪ سندھی ' 5٪ بلوچ ' 10٪ گجراتی ' 10٪ راجستھانی اور 10٪ دیگر بھی ھیں لیکن آپس میں متحد نہیں ھیں۔

کراچی کے 25٪ اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں نے مھاجر لسانی تشخص کی بنیاد پر ایم کیو ایم کے پلیٹ فارم پر آپس میں متحد ہوکر کراچی پر قبضہ کیا ھوا ھے اور 15٪ پنجابی ' 15٪ پٹھان ' 10٪ سندھی ' 5٪ بلوچ ' 10٪ گجراتی ' 10٪ راجستھانی اور 10٪ دیگر کو ان اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں نے یرغمال بنایا ھوا ھے۔

کراچی کے 15٪ پنجابی ' 15٪ پٹھان ' 10٪ سندھی کی آبادی ان 25 ٪ اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں سے زیادہ بنتی ھے۔ اگر کراچی کے 15٪ پنجابی ' 15٪ پٹھان ' 10٪ سندھی آپس میں متحد ھو جائیں تو 5٪ بلوچ ' 10٪ گجراتی ' 10٪ راجستھانی اور 10٪ دیگر نے بھی اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کے قبضہ سے نجات کے لیے پنجابی ' سندھی اور پٹھان کو ھی سپورٹ کرنا ھے اور کراچی پر اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کے بجائے پنجابی ' سندھی اور پٹھان کا کنٹرول ھو جانا ھے۔

کراچی پر 25 ٪ اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کے کنٹرول کی وجہ سے کراچی کے 15٪ پنجابی ' 15٪ پٹھان ' 10٪ سندھی ھی پریشان نہیں ھیں بلکہ 5٪ بلوچ ' 10٪ گجراتی ' 10٪ راجستھانی اور 10٪ دیگر بھی اذیت کا شکار ھیں۔