Tuesday, 11 October 2016

پٹھان ' بلوچ ' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر پاکستان میں فساد کی جڑ ھیں۔

پاکستان کی 60٪ آبادی پنجابی کی ھے۔ 15٪ آبادی ھندکو ' بروھی اور سماٹ کی ھے۔ جبکہ 15٪ آبادی پٹھان ' بلوچ ' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر کی ھے اور 10٪ آبادی کشمیری ' گلگتی بلتستانی ' چترالی و دیگر کی ھے۔

پنجاب تو پنجابیوں کا ھے جبکہ پنجابی خیبر پختونخواہ ' بلوچستان ' سندھ اور کراچی میں بھی رھتے ھیں۔

خیبر پختونخواہ کے اصل باشندے ھندکو ھیں لیکن افغانستان سے آکر خیبر پختونخواہ پر قبضہ پٹھانوں نے کیا ھوا ھے۔

بلوچستان کے اصل باشندے بروھی ھیں لیکن کردستان سے آکر بلوچستان پر قبضہ بلوچوں نے کیا ھوا ھے۔

سندھ کے اصل باشندے سماٹ ھیں لیکن کردستان سے آکر سندھ پر قبضہ بلوچوں نے کیا ھوا ھے۔

کراچی منی پاکستان ھے ' اس لیے کراچی میں پنجابی ' ھندکو ' بروھی ' سماٹ ' کشمیری ' گلگتی بلتستانی ' چترالی ' گجراتی ' راجستھانی کے علاوہ پٹھان ' بلوچ ' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر و دیگر باشندے بھی رھتے ھیں لیکن ھندوستان سے آکر کراچی پر قبضہ اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں نے کیا ھوا ھے۔

پاکستان کی 85٪ آبادی پنجابی ' ھندکو ' بروھی ' سماٹ ' کشمیری ' گلگتی بلتستانی ' چترالی ' گجراتی ' راجستھانی امن پسند ' محبِ وطن اور محنت کش ھیں لیکن پاکستان کی 15٪ آبادی پٹھان ' بلوچ ' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر کا کام ھندکو ' بروھی ' سماٹ کو اپنے سیاسی ' سماجی اور معاشی تسلط میں رکھنے کے ساتھ ساتھ پاکستان کے خلاف سازشیں کرکے پنجاب اور پنجابیوں کو بلیک میل کرتے رھنا بن چکا ھے۔

پاکستان کے خلاف سازشیں کرنے ' پنجاب اور پنجابیوں کو بلیک میل کرنے کے لیے ھی پٹھان پختونستان ' بلوچ آزاد بلوچستان' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر جناح پور کی سازشیں کرتے رھتے ھیں۔

پاکستان کی فوج کا آپریشن بھی ان ھی علاقوں میں ھو رھا ھے جہاں یہ پٹھان ' بلوچ ' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر رھتے ھیں۔ مطلب یہ کہ پاکستان کی فوج کا آپریشن پاکستان کی 85٪ آبادی پنجابی ' ھندکو ' بروھی ' سماٹ ' کشمیری ' گلگتی بلتستانی ' چترالی ' گجراتی ' راجستھانی کے خلاف نہیں ھورھا بلکہ پاکستان کی 15٪ آبادی پٹھان ' بلوچ ' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر کے خلاف ھورھا ھے۔

پنجابی قوم اگر چاھتی ھے کہ پاکستان کی 15٪ آبادی پٹھان ' بلوچ ' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر نہ صرف ھندکو ' بروھی ' سماٹ کو اپنے سیاسی ' سماجی اور معاشی تسلط سے آزاد کردیں بلکہ پاکستان کے خلاف سازشیں کرنے ' پنجاب اور پنجابیوں کو بلیک میل کرنے سے بھی باز آجائیں تاکہ پاکستان کی 85٪ آبادی پنجابی ' ھندکو ' بروھی ' سماٹ ' کشمیری ' گلگتی بلتستانی ' چترالی ' گجراتی ' راجستھانی امن و سکون سے زندگی گذار سکیں اور پاکستان بھی مظبوط ' مستحکم اور خوشحال ھوجائے تو پنجابی قوم کو پٹھان ' بلوچ ' اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر کو کنٹرول میں رکھنے کے لیے سخت اقدامات کرنے پڑیں گے۔