Monday, 16 January 2017

جنوبی پنجاب کے جاگیرداروں سے جاگیریں اور دریا کے کچے کی زمینیں واپس لینا کیوں ضروری ھے؟

بلوچ ' پٹھان اور عربی نزاد مخدوم ' جیلانی ' گیلانی ' قریشی ' عباسی وغیرہ نے برٹش کے پنجاب پر قبضے کے دوران پنجاب اور پنجابیوں کے خلاف بھرپور سازشیں کیں ' جس پر برٹش گورنمنٹ نے انعام کے طور پر جنوبی پنجاب میں ان کو جاگیریں اور دریا کے کچے کی زمینیں دیں۔

ان بلوچ ' پٹھان اور عربی نزاد مخدوم ' جیلانی ' گیلانی ' قریشی ' عباسی وغیرہ جاگیرداروں نے "سیکولر پنجاب کو ریلیجیس پنجاب" میں تبدیل کرنے کے لیے پنجابی مسلمانوں کو سکھ پنجابیوں اور ھندو پنجابیوں سے بدظن اور متنفر کرنے کی بھی سازشیں کیں۔

یہ بلوچ ' پٹھان اور عربی نزاد مخدوم ' جیلانی ' گیلانی ' قریشی ' عباسی وغیرہ جاگیردار اس وقت بھی اپنے اپنے علاقوں میں رھنے والے پنجابیوں پر ظلم اور زیادتیاں کرواتے رھتے ھیں۔

یہ بلوچ ' پٹھان اور عربی نزاد مخدوم ' جیلانی ' گیلانی ' قریشی ' عباسی وغیرہ جاگیردار اب پنجاب کو تقسیم اور پنجابیوں کو آپس میں لڑوانے کے لیے "سرائیکی سازش" بھی کر رھے ھیں۔

پنجاب کے بلوچ ' پٹھان اور عربی نزاد مخدوم ' جیلانی ' گیلانی ' قریشی ' عباسی وغیرہ جاگیرداروں سے جاگیریں اور دریا کے کچے کی زمینیں واپس لے لی جائیں تو پنجاب میں "سرائیکی سازش" کا انجام کیا ھو گا؟

پنجاب کے بلوچ ' پٹھان اور عربی نزاد مخدوم ' جیلانی ' گیلانی ' قریشی ' عباسی وغیرہ جاگیرداروں سے جاگیریں اور دریا کے کچے کی زمینیں واپس لے لی جائیں تو کیا یہ پھر بھی اپنے اپنے علاقوں میں رھنے والے پنجابیوں پر ظلم اور زیادتیاں کروا سکیں گے؟