Sunday, 18 June 2017

پنجابی خود کو مھاجروں اور پٹھانوں سے بچائیں۔

پاکستان میں پنجاب ' پنجابیوں اور پاکستان کے لیے مسئلہ اور خطرہ سندھی اور بلوچ نہیں صرف اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر اور پٹھان ھیں۔ کیونکہ پاکستان کی بیوروکریسی ' سول سروسز ' ملٹری سروسز ' سیاست ' صحافت ' مذھبی تنظیموں اور شھری علاقوں پر سندھی اور بلوچ کا غلبہ تو کیا موجودگی بھی انتہائی کم ھے جبکہ اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر اور پٹھان چھائے ھوئے ھیں۔ اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر اور پٹھان چونکہ پاکستان کی بیوروکریسی ' سول سروسز ' ملٹری سروسز ' سیاست ' صحافت ' مذھبی تنظیموں اور شھری علاقوں پر پنجابیوں کے بعد سب سے زیادہ چھائے ھوئے ھیں ' اس لیے پنجابپنجابیوں اور پاکستان کے خلاف ھر وقت سازشوں اور شرارتوں میں لگے رھتے ھیں۔

سندھیوں اور بلوچوں کو انکے اپنے اپنے علاقوں میں سماجی ' معاشی ' انتظامی اور ترقیاتی معاملات میں اختیار چاھیئے ' جو انکو دے دیا جائے تو سندھیوں اور بلوچوں سے پنجابیوں کو کوئی مسئلہ نہیں رھنا۔ جبکہ پنجابیوں کی طرف سے اگر سندھیوں اور بلوچوں کی پاکستان کی بیوروکریسی ' سول سروسز ' ملٹری سروسز ' شھری علاقوں ' صنعت ' تجارت اور ھنرمندی کے شعبوں میں مستحکم ھونے میں مدد کردی جائے تو سندھیوں اور بلوچوں نے پنجابیوں کے دلی دوست بن جانا ھے۔ لیکن اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر اور پٹھان ایک تو پاکستان کی بیوروکریسی ' سول سروسز ' ملٹری سروسز ' شھری علاقوں ' صنعت ' تجارت اور ھنرمندی کے شعبوں پر قابص ھیں۔ دوسرا اِنہوں نے پنجاب میں بھی ڈیرے ڈالے ھوئے ھیں۔ تیسرا پنجابپنجابیوں اور پاکستان کی جڑیں کاٹنے میں بھی لگے رھتے ھیں۔

یہ اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر اور پٹھان گذشتہ 70 سالوں سے پنجابی قوم کو مسلمان اور پاکستانی ھونے کے نام پر بے واقوف بنا رھے ھیں۔ اردو بولنے والے ھندوستانی ' ھندوستان سے ' جبکہ پٹھان ' افغانستان سے ' اپنے اپنے لوگوں کو بلا بلا کر پاکستان ' خاص طور پر پنجاب اور سندھ پر قابض بھی کرواتے جا رھے ھیں۔ اب پنجابی قوم کو ان اردو بولنے والے ھندوستانیوں اور پٹھانوں کو سبق سکھانا پڑنا ھے تا کہ انکو انکی اوقات میں رکھا جائے۔ ورنہ ان اردو بولنے والے ھندوستانیوں اور پٹھانوں نے پاکستان اور خاص طور پر پنجاب اور پنجابی قوم کو تباہ و برباد کر کے رکھ دینا ھے۔