Friday, 3 March 2017

بلوچ ‘ پختون اور مھاجر کیخلاف پنجابیوں کا جوابی ردِ عمل بہت شدید ھوگا۔

اچھی اور بری شخصیات ھر علاقے اور ھر قوم میں ھوتی ھیں۔ اس لیے پنجاب ' سندھ ' خیبرپختونخواہ اور بلوچستان میں بھی ھیں۔ لیکن مسئلہ اس لیے خراب ھے کہ پنجابی اپنی قوم کی بری شخصیات کے آلہ کار بن کر عام بلوچ ‘ پختون یا اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر کو گالیاں نہیں دیتے۔ اس قوم کی بری شخصیت کو ھی برا کہتے تھے۔ جیسے بلوچوں میں خیر بخش مری ' ھربیار مری ' اکبر بگٹی ' برھمداد بگٹی۔ پختونوں میں غفار خان ' ولی خان ' اسفند یار ' محمود خان اچکزئی۔ سندھیوں میں جی - ایم - سید۔ اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجروں میں لیاقت علی خان ' الطاف حسین ' پرویز مشرف۔ لیکن پنجابیوں نے نہ تو عام بلوچ ‘ پختون یا اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر کو گالیاں دیں اور نہ پنجاب میں پنجابیوں نے بلوچ ‘ پختون یا اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر کو قتل کیا ' نہ ظلم و زیادتی کی ' نہ خوف زدہ کیا ' نہ انکی زمین جائیداد پر قبضہ کیا ' نہ پنجاب میں کاروبار کرنے سے روکا۔ نہ بلوچ ‘ پختون یا اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر قوم کو گالیاں دیں۔ لیکن عام بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر نے پنجابی کے ساتھ یہ سب کچھ کیا اور اپنے علاقے میں کیا۔

پنجابیوں نے بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر کو اور انکے علاقے کو سازشیں کرکے زبان کے لہجوں اور برادریوں میں تقسیم کرنے کی کوشش نہیں کی لیکن بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر یہ کر رھے ھیں۔ اب چونکہ پنجابی بھی پنجابی قوم پرستی کی طرف راغب ھوتے جارھے ھیں۔ اس لیے پنجابی قوم کی طرف سے بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر کے ساتھ تھوڑا بہت جوابی ردِ عمل ھوسکتا ھے۔ تاکہ بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر کو اندازہ ھو جائے کہہ جو کچھ بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر نے پنجابی کے ساتھ کرنا شروع کیا ھوا ھے ' ویسا ھی کچھ اگر پنجابی قوم نے بھی شروع کردیا تو پھر بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر کو کیا حفاظتی یا جوابی اقدامات کرنے ھونگے؟

بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر  کے لیے اب چارہ یہ ھی بچا ھے کہ پنجاب ' پنجابی ' پنجابی اسٹیبلشمنٹ ' پنجابی بیوروکریسی ' پنجابی فوج کے الفاظ ادا کرکے پنجاب اور پنجابی کو گالیاں دینے کی صدا پنجاب نہ پہنچنے دیں اور اپنے اپنے علاقے میں رھنے والے پنجابیوں کے ساتھ ظلم اور زیادتی کی اطلاع پنجاب نہ پہنچنے دیں۔ اپنے اپنے سیاسی رھنماؤں کے گلے میں پٹہ ڈالیں اور اپنے اپنے علاقے میں جن پنجابیوں کی زمین اور جائیدار پر قبضے کر چکے ھیں ' وہ واپس کردیں۔ جن پنجابیوں کو قتل کرچکے ھیں انکا خون بہا دے دیں۔ جن جن پنجابیوں پر ظلم اور زیادتی کی ھے اسکی تلافی کردیں۔

بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر کو چاھیئے کہ جس پنجابی شخصیت کی وجہ سے انکو نقصان ھوا ھو یا ھو رھا ھو ' بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر اس شخصیت کا نام لیکر الزام لگائیں اور اس شخصیت کے خلاف محاذ آرائی کریں۔ لیکن پنجابیوں کے ساتھ ظلم اور زیادتی کرنے والوں پر نظر رکھیں۔ پنجاب اور پنجابیوں کو گالیاں دینے یا الزام تراشیاں کرنے والوں پر نظر رکھیں۔ ٹی ویی ٹاک شو پر نظر رکھیں۔ اخبارات پر نظر رکھیں۔ بلکہ فیس بک پر بھی نظر رکھیں کہ کوئی بلوچ ‘ پختون اور اردو بولنے والے ھندوستانی مھاجر سیاستدان ' صحافی اور دانشور پنجاب ' پنجابی ' پنجابی اسٹیبلشمنٹ ' پنجابی بیوروکریسی ' پنجابی فوج کے الفاظ ادا کرکے پنجاب اور پنجابی کو گالیاں تو نہیں دے رھا یا الزاماتت تو نہیں لگا رھا۔ تاکہ پنجاب ' پنجابی ' پنجابی اسٹیبلشمنٹ ' پنجابی بیوروکریسی ' پنجابی فوج کے الفاظ ادا کرکے پنجاب اور پنجابی کو گالیاں دینے یا الزام تراشیاں کرنے کی صدا پنجاب نہ پہنچنے اور پنجابیوں کے ساتھھ ظلم اور زیادتی کی اطلاع اب پنجاب نہ پہنچنے۔ ورنہ جوابی ردِ عمل بہت شدید ھوگا۔