Saturday, 17 September 2016

پاکستانی پنجابی کو اب چومکھی جنگ لڑنا پڑے گی۔

پاکستان میں بات قوموں کی ھو یا زبانوں کی ' ذاتوں کی ھو یا نسلوں کی ' مذھبوں کی ھو یا فرقوں کی ' گیم سارا "پاور ڈومینیشن" کا ھے۔

پنجاب کو مذھب کی بنیاد پر تقسیم کروا کر اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ خود مسلمان اور پاکستانی کے بجائے مہاجر ' پٹھان ' بلوچ بن گئے۔ پنجاب اور پنجابی قوم پر الزامات لگا کر ' تنقید کرکے ' توھین کرکے ' گالیاں دے کر ' گندے حربوں کے ذریعے پنجاب اور پنجابی قوم کو بلیک میل کرنا ' اپنا پیشہ بنا لیا۔

اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ کی عادت بن چکی ھے کہ ایک تو ھندکو ' بروھی اور سماٹ پر اپنا سماجی ' سیاسی اور معاشی تسلط برقرار رکھا جائے۔ دوسرا کراچی ' سندھ ‘ خیبرپختونخواہ ' بلوچستان اور جنوبی پنجاب میں رھنے والے پنجابی پر ظلم اور زیادتی کی جائے۔ تیسرا پنجاب اور پنجابی قوم پر الزامات لگا کر ' تنقید کرکے ' توھین کرکے ' گالیاں دے کر ' گندے حربوں کے ذریعے پنجاب اور پنجابی قوم کو بلیک میل کیا جائے۔ چوتھا یہ کہ پاکستان کے سماجی اور معاشی استحکام کے خلاف سازشیں کرکے ذاتی فوائد حاصل کیے جائیں۔

پنجابی ' پاکستان کو بناتے بھی رھے اور انڈیا سے بچاتے بھی رھے لیکن یہ اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ نہ صرف پنجاب اور پنجابیوں کو بلیک میل کرتے رھے بلکہ جناح پور ' پختونستان ' آزاد بلوچستان کی سازشیں اور پاکستان کو توڑنے کی دھمکیاں دیتے رھے۔

ان اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ بلیک میلروں نے پنجابیوں کو ڈیوائیڈ اور خود کو یونائٹ کر کے پنجاب اور پنجابیوں پر اپنی ڈومینیشن رکھنے کا کھیل کھیلا۔ اب "جیسے کو تیسا"۔ لوھے کو لوھا کاٹتا ھے۔ ھیرے کو ھیرا کاٹتا ھے۔ زھر کو زھر مارتا ھے۔ اس لیے اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ کی چال کو ھی پنجابی بھی اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ کے لیے استعمال کرے گا۔

اب پنجابی بھی "ڈیوائیڈ اینڈ رول کا گیم " کھیلے گا۔ پنجابی اب اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ کو ڈیوائیڈ کرے گا اور پنجابیوں کو یونائٹ کرے گا۔ پنجابیوں کو اب پنجاب اور پنجابیوں کے خلاف بڑھتی ھوئی سازشوں اور شرارتوں کا مقابلہ کرنے کے لیے "چو مکھی جنگ" لڑنا پڑے گی۔

اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ چونکہ مسلمان ھیں اور 69 سال تک پنجابی  نے ان اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ کو مسلمان ھی سمجھا۔ لیکن ان اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ نے مسلمان پنجابی کو مسلمان اور پاکستانی نہیں ' پنجابی کہہ کہہ کر گالیاں دیں ' پنجاب اور پنجابی کو لہجوں اور علاقوں میں ڈیوائیڈ کرنے کی سازش کی۔ اس لیے پنجابی اب خود کو یونائٹ کریں گے اور وہ بھی پنجابی کی بنیاد پر۔

جب پنجابی کی بنیاد پر پنجابیوں کو یونائٹ کرنے کی بات ھوگی تو مسلمان پنجابی کے ساتھ ساتھ ' سکھ پنجابی ' کرسچن پنجابی ' ھندو پنجابی بھی ' پنجابی ھونے کی وجہ سے مسلمان پنجابی کے ساتھ ھی ھوگا۔

اس وقت پاکستان میں پنجابیوں کی پاپولیشن 60 % ھے۔ پنجابی ویسے ھی اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ کے مقابلے میں اکثریت میں ھیں۔ لیکن اب جب پنجابی خود کو پنجابی کی بنیاد پر یونائٹ کرے گا اور " پاور گیم " کے لیے اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ کو ڈیوائیڈ کرے گا تو پاکستان میں 60 % پنجابیوں سے مقابلہ کرنے والے کس کس ریشو سے ھونگے؟

اگر پنجابی قوم پرستوں نے مسلمان پنجابی کے علاوہ سکھ پنجابی ' کرسچن پنجابی اور ھندو پنجابی کو بھی یونائٹ کر کے پاکستان میں شامل کر لیا تو کیا ھوگا؟

پنجابی قوم پرستوں نے سکھ پنجابی ' کرسچن پنجابی اور ھندو پنجابی کو بھی پاکستان میں شامل کر لیا تو کیا کشمیر نے بھی پاکستان کا حصہ نہیں بن جانا؟

پھر پاکستان کیا پنجابستان نہیں بن جائے گا ' جس میں 85 % پنجابی ھونگے؟

کیا اردو اسپیکنگ ھندوستانی مہاجر ' پٹھان ' بلوچ مسلمان خود کو سیکولر پنجابستان کی اقلیتی برادریاں تو نہیں بنوانے جا رھے؟