Thursday, 15 September 2016

پنجابی قوم کب تک ان مفاد پرستوں سے بلیک میل ھوگی؟

بلوچ ' پٹھان اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر ' قوم پرست نہیں بلکہ مفاد پرست ھیں۔ ان بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں نے قوم پرستی کے نام پر پنجاب اور پنجابیوں کو نشانہ بنایا ھوا ھے۔

بلوچ ' پٹھان اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر اگر قوم پرست ھوتے تو اپنی اپنی قوم کا شعور اجاگر کرتے ' اپنی اپنی قوم کا اخلاق بہتر کرتے ' اپنی اپنی قوم کا تعلیمی معیار بہتر کرتے ' اپنی اپنی قوم کو ھنرمند بناتے ' اپنی اپنی قوم کی کاروباری صلاحیتوں کو بڑھاتے ' اپنی اپنی قوم کے دوسری قوموں کے ساتھ تعلقات بہتر بناتے۔ لیکن ان بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں نے پنجابیوں کے پنجاب کے بجائے پاکستان کی تعمیر و ترقی اور استحکام جبکہ پنجابی قوم کے بجائے پاکستانی عوام کی فلاح و بہبود اور خوشحالی کی کوششوں کا ناجائز فائدہ اٹھانے کے لیے قوم پرستی کے نام پر پنجاب اور پنجابیوں کو بلیک میل کرنے کا راسته اختیار کر لیا۔

بلوچ ' پٹھان اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر اپنے مفادات حاصل کرنے کے لیے پنجاب اور پنجابیوں پر بیجا الزامات لگاتے رھتے ھیں۔ پنجاب اور پنجابیوں کو گالیاں دیتے رہتے ھیں۔ پاکستان کو توڑنے کی دھمکیاں دیتے رہتے ھیں۔ پنجابی اس وقت نہ بلوچستان جا کر کاروبار کر سکتے ھیں ' نہ سندھ ' نہ خیبر پکتونخواہ اور نہ کراچی۔ جبکہ ان بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں نے نہ صرف سماٹ ' بروھی اور ہندکو کی زمین پر قبضہ کیا ھوا ھے۔ بلکہ پنجاب کی سیاست ' صحافت ' صعنت ' تجارت ' سرکاری نوکریوں اور زمیںوں پر بھی یہ بلوچ ' پٹھان اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر قبضہ کرتے جا رھے ھیں۔

جب تک پنجابی ' پنجاب کے بجائے پاکستان کی وکالت کرتے اور پنجابی کے بجائے صرف پاکستانی بنے رھیں گے تو ان بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کے پنجاب اور پنجابیوں پر لگائے جانے والے الزامات کا جواب کون دے گا؟

پنجابیوں کو چاھیئے کہ اگر بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کے پنجاب اور پنجابیوں پر لگائے جانے والے الزامات درست ھیں تو بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں پر ظلم اور زیادتیاں بند کریں اور ان بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں پر کیے گئے ظلم اور زیادتیوں کا حساب کتاب دیں۔

پنجابیوں کو چاھیئے کہ اگر بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کے پنجاب اور پنجابیوں پر لگائے جانے والے الزامات درست نہیں ھیں تو بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کو پنجاب اور پنجابیوں کو گالیاں دیتے رھنے ' پنجاب اور پنجابیوں پر جھوٹے الزامات لگاتے رھنے ' پنجاب اور پنجابیوں کو بلیک میل کرتے رھنے ' پاکستان کو توڑنے کی دھمکیاں دیتے رھنے کی عادت کو ختم کرنے کے لیے ان بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کو پنجابی قوم پرست بن کر بھرپور جواب دیں۔

پٹھان ' بلوچ اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجر کی عادت بن چکی ھے کہ ایک تو ھندکو ' بروھی اور سماٹ پر اپنا سماجی ' سیاسی اور معاشی تسلط برقرار رکھا جائے۔ دوسرا پنجاب اور پنجابی قوم پر الزامات لگا کر ' تنقید کرکے ' توھین کرکے ' گالیاں دے کر ' گندے حربوں کے ذریعے پنجاب اور پنجابی قوم کو بلیک میل کیا جائے۔ تیسرا یہ کہ پاکستان کے سماجی اور معاشی استحکام کے خلاف سازشیں کرکے ذاتی فوائد حاصل کیے جائیں۔ لیکن اس صورتحال میں پنجابی قوم کا رویہ مفاھمانہ ' معذرت خواھانہ اور لاپرواھی کا ھے۔

پنجابیوں نے اگر اب بھی پنجابی قوم پرست بن کر ان بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کو حساب کتاب یا بھرپور جواب نہ دیا تو پنجابی پھر پنجاب اور پنجابیوں کو تو تباہ و برباد کروا ھی رھے ھیں ' پاکستان کو بھی تباہ و برباد کروا بیٹھیں گے۔

پاکستان پنجابی ' سماٹ ' ھندکو اور بروھی قوموں کا ملک ھے۔ پنجاب ' پنجابی قوم کا ھے۔ سندھ ' سماٹ قوم کا ھے۔ (بلوچ کردستانی ھیں اور مھاجر ھندوستانی ھیں)۔ بلوچستان ' بروھی قوم کا ھے۔ (بلوچ کردستانی ھیں)۔ خیبر پختونخواہ ' ھندکو قوم کا ھے (پٹھان افغانستانی ھیں)۔ پنجابی قوم ' سماٹ کو سندھ ' بروھی کو بلوچستان ' ھندکو کو خیبر پختونخواہ کے اصل باشندے سمجھتی ھے۔

ھندوستانی مھاجر ' کردستانی بلوچ اور افغانستانی پٹھان ' پنجابی قوم اور پاکستان کے دوست نہیں ھیں۔ اسی لیے پنجابی قوم اور پاکستان سے دشمنی کرتے رھتے ھیں۔ جبکہ سماٹ قوم ' بروھی قوم ' ھندکو قوم ' پنجابی قوم اور پاکستان کے دشمن نہیں ھیں۔

پاکستان کی سب سے بڑی قوم پنجابی ھے۔ پاکستان کی 60 فی صد آبادی پنجابی ھے۔ لہذا پنجابی قوم کا بنیادی فرض اور اخلاقی ذمہ داری ھے کہ ان بلوچوں ' پٹھانوں اور اردو اسپیکنگ ھندوستانی مھاجروں کو پنجابی قوم پرست بن کر بھرپور جواب بھی دیں اور؛

1. خیبر پختونخواہ میں ھندکو قوم کو سماجی ' معاشی اور سیاسی طور پر مضبوط کرکے افغانی دراندازوں اور قبضہ گیروں کے سماجی ' معاشی اور سیاسی تسلط سے نجات دلوائے۔ جو اب خود کو پٹھان کہلواتے ھیں۔

2. بلوچستان میں بروھی قوم کو سماجی ' معاشی اور سیاسی طور پر مضبوط کرکے کردستانی دراندازوں اور قبضہ گیروں کے سماجی ' معاشی اور سیاسی تسلط سے نجات دلوائے۔ جو اب خود کو بلوچ کہلواتے ھیں۔

3. سندھ میں سماٹ قوم کو سماجی ' معاشی اور سیاسی طور پر مضبوط کرکے دیھی سندھ میں کردستانی دراندازوں اور قبضہ گیروں کے سماجی ' معاشی اور سیاسی تسلط سے نجات دلوائے۔ جو اب خود کو بلوچ کہلواتے ھیں اور شہری سندھ میں ھندوستانی دراندازوں اور قبضہ گیروں کے سماجی ' معاشی اور سیاسی تسلط سے نجات دلوائے۔ جو اب خود کو مھاجر کہلواتے ھیں۔

4. جنوبی پنجاب میں ملتانی پنجابی ' ریاستی پنجابی ' ڈیرہ والی پنجابی کو سماجی ' معاشی اور سیاسی طور پر مضبوط کرکے کردستانی دراندازوں اور قبضہ گیروں کے سماجی ' معاشی اور سیاسی تسلط سے نجات دلوائے۔ جو اب خود کو بلوچ کہلواتے ھیں۔